نن سر سہب مرون _ درناز رحیم

الّمی خوانبو

رخصت اف – مرید بلوچ

مزاحمت زند ءِ ’’ای، ہمو ہراکہ جہانی امن ئنا ٹیکی ءِ دوئی کرینٹ، مونجائی تون انداسرپد مریوہ کہ بیدس تشدد...

بلوچ سلہہ بند تنظیم تا کروکا گڑاس فیصلہ تا جاچ __میرین بلوچ

جنگ اٹ ہچبر رحم مفک بلکہ جنگ ءِ نفسیاتی پڑا کٹوئی مریک جسمانی طاغت آن زیات نفسیاتی طاغت جنگ...

تاریخ نا پنہ غاک (چارمیکو بشخ) | خان خدائیداد خان – محبوب شاہ

تاریخ نا پنہ غاک (چارمیکو بشخ) خان خدائیداد خان نوشت: محبوب شاہ دی بلوچستان پوسٹ - براہوئی کالم 1896ء اٹی(No.7) و 1870ء...

نن سر سہب مرون

نوشت: درناز رحیم

کنے اُرے تمنگ ئس، اینو کنا اکیڈمی نا اولیکو دے ئس و ای خواہتوٹہ کہ اینو نا دے کنے اُرے تمے۔ ای زو زو تینا کوش آتے بیناٹ، چادر ءِ بینیسہ کتاب آتے ارفیٹ و پیشتماٹ، درغ ءِ بند کننگ ئسوٹ کہ کنا ہیڑکو توار کرے “مچے سلہ سعدیہ۔۔۔” ای زو اس پدی چک خلکُٹ و بیزاری ئٹ پاریٹ “انت ئسے نازی، کنے اُرے تمنگ ءِ۔” نازی دوٹی گڑاس ارفیسہ کنا کنڈ آ بس “تینا فون ءِ تو در، بدر ءُ شار ئسے دا شار آن جوانیکا واخب ہم افیس، خدا کپ گڑاس مرے تو کاریم ایتو نے۔۔۔” ای فون ءِ دو آن تا ہلکُٹ و بشخندہ کریسہ منتواری مسُٹ “منتوار نازی، اشتاف ئٹ اسُل اُستان درینُٹ فون ءِ۔”

فون ءِ زو اس کوپہ غا ٹنگوک چُنکا پرس ئٹی شاغاٹ و راہی مسُٹ۔ ہاسٹل نا گیٹ آن پیشتمنگ تون کنے رکشہ اس دو بس۔ ای اُست ئٹ پاریٹ شکر ءِ خُدا نا کہ رکشہ کن باز اُروئی تمتو کنے، نہ تو اینو پکا اُرے تماکہ کنے۔ اینو ای گَل و بال اسُٹ، کوئٹہ شار ئٹ اولیکو وار، یکہ تینا تُغ تا ایسری نا کنڈ آ گام خلنگ ئسوٹ۔ جند باوری و خوشی نا اسہ چھول اس ئس ہراٹی ای پرّہ آتے تالان کریسہ بال کننگ خواہسوٹہ۔ کنا مِلی ٹی وار وار آ جتا وڑ ئنا ندارہ بَننگ ئسر۔ اسہ ڈرامہ ئسے نا ڈول وڑ وڑ ئنا ندارہ کنا خن تا مون آن گدرینگ ئس۔ و ای دا ندارہ آتے ملوک خن تیٹ خننگ ئسوٹ، امر ای اکیڈمی ٹی پیہوٹ، امر کلاس ئٹ تولوٹ، امر ای استاد آن سوج کروٹ و امر اونا سوج آتا ورندی ایتوٹ۔ و بروکا سال اسکان ای میڈیکل کالج ئٹ داخلہ ہلوٹ، و اُست ئٹ انشاء اللہ انشاء اللہ پاننگ ئسوٹ کہ ای انت کہ سوچنگ اُٹ غٹ آمین مریر۔

ای اسہ چنکو شار ئسے آن تعلقداری تخیوہ و کنکن دا بھلو ہیت اس ئس کہ کنے تینا تُغ تا ایسری نا وار دو بسنے، و داسا ای تینا تُغ تے ایسری تننگ کیوہ۔ اخس زیبدار ئس دا گمان۔ کہی بندغ آتا تُغک اوفتا ملی تیٹ کہیرہ و اوفتے دنو وار دو بفک کہ تینا تُغ تے ایسری ایتر۔ ای اندن تینا خیال آتیٹ گم انت انت سوچنگ ہلوٹ۔ اخس گچین و زیبدار ئس تینا مزل نا کنڈ آ روان مننگ نا سفر۔

ای اندن تینا خیال آتیٹ  گم ئسوٹ کہ کنا خف تیٹ توار اس بس ہرا کنے کنا خیال آتا جہان آن اسہ دم کشا۔ اسہ مُچی سے نا توار، نعرہ آتا توار و کوکار۔ ای تینا خیال آتا جہان آن اسہ جھٹ ئسے ٹی پیشتماٹ و مُستی کسر آ اُراٹ۔ منَہ نرینہ، نیاڑی و چُنا کسر آ پیادہ مارچ کننگ ئسر ہرافتا دو تیٹ بینر و فوٹو ئسر۔ اسہ بھلو بینر اس ارفوک اسہ قطار مُہہ ئٹ ہِننگ ئس و پد ئٹ ایلو بندغ آک فوٹو دو تیٹ ارفیسہ قطار نا پد ئٹ ہِننگ ئسر۔ نیاڑی و چُنا تا کچ نرینہ آ تیان گیشتر ئس۔

دانگ اینگ اُراٹ منَہ بندغ روڈ ئنا کرّک آ سلوک ئسر کس پارو تماشہ اس ہُننگ ءُ۔ منَہ چُنک سن ءُ مسڑ ہم مُچی ٹی اوار ئسر ہرافتیان اسٹ نا دو ٹی مائیک اس ہرا نعرہ خلنگ ئس و مُچی اونا نعرہ آتا وردندی تننگ ئس۔ او اسٹ اسٹ آ پِن ہلککہ و ایلو غٹ اسہ توار ئٹ پاریرہ “رہا کرو، رہا کرو ( یلہ کبو، یلہ کبو)۔”

ای زو اس رکشہ والا ءِ سلینگ کن پاریٹ؛ “ولے بی بی دا او جاگہ اف ہرا جاگہ نا نی پاریس” ای اودے ودیک ہیت ئنا موکل تننگ آن بیدس پاریٹ “ہئو ایلم کنے سما ءِ، داسا کنے انداڑے ہنوئی ءِ، انداڑے سلہ” رکشہ سلیس و ای کرایہ نا سوج کریٹ، کرایہ ءِ تسوٹ و دڑنگاٹ روڈ ئنا کرّک آ سلیسُٹ۔ دا مُچی داڑے برانز کننگ ئس و دا برانز بیگواہ آ بندغ آتیکن مننگ ئس کنے داخس تو سما تما۔

ای مُچی ءِ خوڑتی ئٹ اُراٹ۔ دافتیان منَہ بندغ ءِ ای درست کریٹہ، ہرافتے ای فیس بُک آ خناسٹ، دا بیگواہ آ بندغ آتا خاہوت آک ئسر۔ ای فیس بُک آ دافتا برانز آتا فوٹو و ویڈیو تے خناٹہ ارمانی مسوٹہ و شرفداری نا اسہ مارشت اس کنا است ئٹ ودی مسکہ کہ ننا دا ہیر لمّہ آک اخس دلیر ءُ، ہچ وڑ تینا جہد آن پدی مفسہ، اسہ ریاست ئسے تون مون تروک سوگو سلوک ءُ، و جہان سما اف ہرا بنیات آ نیاڑی ءِ نزور سرپند مریک، ننا دا نیاڑیک ہچ حساب آ نزور افس۔ دا ہمو ہیڑ لمّہ آکو ہرا بیدس کس ئنا دروغ ئنا آسرہ آتا چکار ءِ کننگ آن و بیدس خُلیس آن اسہ وڑ جُہد کننگ ءُ۔

کسر نا کرک آ سلوک ای برانزی تا نعرہ آتے خوڑتی ئٹ بِننگ ئسوٹ۔ دو ٹی مائیک اسہ چنک سن مسڑ اس ہرا بھازی آن میٹرک یا ایف ایس سی نا خوانندہ اس ئس، اسٹ اسٹ آ پِن ہلککہ و ورندی ٹی ایلو برانزیک پاریرہ “رہا کرو، رہا کرو (یلہ کبو، یلہ کبو۔” و ای اندن کسر نا کرک آ سلوک دا ندارہ ءِ ہُننگ ئسوٹ۔ ای ہمو عکس آتے ہم خوڑتی ئٹ ہُننگ ئسوٹ ہرا اوفتا دو ٹی ئسر۔ و کس پارو دا عکس آک کنا ملی ٹی نشخ مسر۔

مُچی کنا مون آن گدرینگ ئس و ای اسہ بے ساہ ءُ دھتک ئسے نا ڈول ہُننگ ئسوٹ کہ نا گمان آ برانزی تیان اسہ نیم وہی ءُ آئی اس کسر آ بے سُد مریسہ تما۔ ای بیدس گڑاس مارنگ آن بھلو بھلو گام ارفیسہ اندن پا رُمبیسہ آئی نا کنڈ آ ہناٹ۔ کنے آن مُست آئی نا رہی ئنا منہ زالبول اودے سمبھالار، اسہ چُنک سن ءُ مسڑ اس زانو بند کریسہ آئی نا کاٹُم ءِ تینا زان آ تخا اسہ پین زالبول اس مارکو سے توار خلک “دیر ہتہ زو اس” مارکو ہِننگ کہ کرے ولے اوڑان مُست اسہ پین مسڑ اس تینا کوپہ آ ٹنگوک پرس آن دیر ئنا بوتل اس کشیسہ مُستی کرے۔ آئی نا کاٹُم ءِ تینا زان آ تخوکا مسڑکو دیر ئنا بوتل ءِ ہلک و اسہ دو ئنا چنک ئٹی دیر شاغیسہ اونا مون آ چٹ تس۔ اِرا مُسہ وار اندن کرے کہ آئی سُد کرے و خن تے ملا۔ مسڑکو بوتل نا بچوکا دیر تے جیجا ءِ کُنفنگ نا کوشست کرے ولے جیجا وار وار آ اسہ پن اس ہلکوکہ۔ اوڑے ساڑی غُٹ بندغ آک آئی ءِ اُست تننگ ئسر۔

ای تینا رہا سلوک اسہ مسڑ ئسے آن سوج کریٹ “دا آئی دیر نا پن ءِ ہلنگ ءِ۔ مار تا بیگواہ ءِ؟” مسڑکو کنے خوڑتی ئٹ اُرا۔ او کنے درست کتو، چائس کہ ای برانزی تیان افٹ و گیمرینگوکا توار ئٹ پارے “دا آئی تینا مار ئنا پن ءِ ہلنگ ءِ۔ اِرا تو مُست مار تا اُراغان زوراکی ئٹ بیگواہ کننگانے۔”

ای اسہ نظر اس آئی ءِ ہُراٹ و دوارہ مسڑکو آن سوج کریٹ “اُرا تا انداڑے کوئٹہ ٹی ءِ۔” مسڑکو نا خن تیٹ ای اسہ دم ڈکھ ئنا استار اس خناٹ و گیمرینگوکا توار ئٹ پارے “آخہ، مستونگ نا ئسے آئی، داڑے سیال تا ہم اف، و اُست ئنا ناجوڑ ئسے اندا سوب آن بھاز چرینگ کپک۔ داسا نن پیادہ مارچ کننگ ئسون تو تب تہ زیات خراب مس۔ دا ناجوڑی ٹی ہم آئی اینو برانز ئٹ بشخ ہلنگ کن بسنے کہ نوا دا جہد اونا مار ئنا آجوئی نا کسر ءِ ملے۔”

ای اسُل با خٹ سیلسُٹ پوہ متوٹ کہ انت پاو، انت سوج کیو و انت ورندی ایتو، بس چُپ سلوک آئی ءِ اُراٹ و اُست ئٹ پاریٹ دا آئی نا ہمت ءِ جہد ءِ سلام ءِ۔ مسڑکو پوہ مس کہ ای اولیکو وار دنو برانز اس مون پہ مون خننگ اُٹ ای اندن ہپائنگوک برانزی تے و آئی ءِ ہُننگ ئسوٹ کہ او برانز ئٹ ساڑی غٹ بندغ آتیان زیات ای لغور خننگاٹہ، کنے آن بیدس کُل دلیری، بڑز حوصلہ و ہمت نا درشانی کننگ ئسر۔ کُل اندن مہر ئٹ آئی ءِ سمبھالنگ ئسر و حوصلہ تننگ ئسر۔ اوڑے کُل آن زیات ای فریشان و ہبکہ ئسوٹ۔ خنک کنا پھاؤڑینگاسر و بُت آن بار سلوک بیرہ ہُننگ ئسوٹ۔

 مسڑکو کنا دو ٹی کتاب آتے ہُرا و سوج کرے “نی بھازی آن جاگہ اس کلاس ہلنگ کن ہننگ اُس، یا چھٹی کرینس بننگ اُس” ای گوڑینگیسہ مسڑکو ءِ ہُراٹ و پدا تینا کتاب آتے ہُراٹ، و ہبکہ ہبکہ پاریٹ “آن، جی ہئو۔۔۔ ای اکیڈمی آ ہننگ ئسوٹ۔ اینو کنا اولیکو کلاس ئس” مسڑکو بشخندہ کریسہ سوج کرے “گُڑا مگہ نے اُرے تمنگ اف” ای گیمرینگوکو بشخندہ اس کریسہ پاریٹ “ہئو کنا خیالا کنا اولیکو کلاس رہینگا۔”

مسڑکو نا جوڑ تیا بشخندہ انگہ تالان ئس و کنے پارے “گُڑا اینو نن نا کلاس ءِ سلیفین، ننا زند آتیٹ باز آ گڑاک پد سلیسنو، اسہ اندا جہد ءِ ہرادے نن پد بٹنگ کپنہ و پد بٹنگ خواپنہ۔ نے اگہ باز اُرے تمتنے گُڑا نی ہن تینا کلاس ءِ ہل۔” ای زور ئنا بشخندہ اس جوڑ تیا تالان کریسہ کاٹُم ءِ شیف کریٹ۔ کنا خنک بڑز مننگ الوس کہ ای بیرہ کلاس کن پد تمتنُٹ” نئے، اینو تو کلاس رہینگا ولے شاید او کلاس روم نا سبخ آن زیات کن کہ پین سبخ اس المی ئس، کنے لگپک کہ کنا نسخان مس۔ پگہ آن اللہ خیر کے ہنوٹ ریگولر اکیڈمی آ۔”

برانزیک آئی ءِ سمبھالیسہ سیخا سے ٹی تولفیر و داسا برانزیک ہم روڈ آ توسر۔ اول نا مسڑکو ہرا مائیک دوٹی نعرہ خلنگ ئس پڑو کرے کہ داسا پیادہ مارچ ءِ انداڑے ایسر کینہ و انداکا برانزیک اسٹ اسٹ آ بریر تینا ہیت آتے مونا تخر۔ بیگواہ آ بندغ آتا سیال و عزیر آک ہرا برانز ئٹ اوار ئسر اسٹ اسٹ آ بش مریسہ مائیک ءِ دو ٹی ہلیسہ تینا ڈکھ و دڑد آتا درشانی کننگ ئسر۔ “اگہ نی اشتاف افیس تو بر ننتو تول” مسڑکو تینٹ ہم توس و کنے ہم دو ئنا اشارہ ئٹ تینا رہا تولنگ نا پارے۔ کُل ئنا دو ٹی فوٹو ئسر ہرافتیا پن و بیگواہی نا تاریخ و ہراکان کہ بیگواہ مسوسر ہمو جاگہ نا پنک لکھوک ئسر۔ ای دامون ہیمون ہُراٹ، بندغ آک تینا ہڑدے ئی کاریم تیٹ اختہ ئسر، موٹر سائیکل آک، اُلاخ آک، پیادہ ہنوکا بندغ آک غٹ اسہ نظر اس برانز کروکا تیا شاغارہ و گدرینگارہ، دامون ہیمون ئٹ دکان تیٹ کاریم کروکا ہم اسہ نظر اس برانزی تیا شاغنگ آن گڈ تینا کاریم تیٹ اختہ ئسر۔

اندا مسڑکو کنے دُن دامون ایمون بندغ آتے خوڑتی ئٹ ہُننگ آ خنا تو پارے “نے سما ءِ دا اسہ مڑدہ ءُ قوم ئسے نا پیدواری ءِ کہ او تینا خن تا مونا ظلم مننگ آ خنک ولے اونا برخلاف ہیت کپک، تینا واری نا ودار ءِ کیک۔ خدا کپ کہ دافتیا اندا دے برے و دا ہم اندا دڑد ءِ خنر ہرا دڑد آن نن گدرینگ اُن۔ ولے دا عذاب تیوہ قوم آ نازل مسنے و داڑان تینے رکھنگ نا اسٹ انگا کسر دانا برخلاف بش مننگ و مزاحمت کننگ ءِ۔ خدا کے نن دا جہد ئٹ سر سہب مرین، دا خاخر ءِ کسفن و پین وختی کس ئنا خن تا دید آک اذیت خانہ تا گواچی مفس، و کنے یخین ءِ کہ نن سرسہب مرون۔ ”

ای بیدس گڑاس پاننگ آن اودے ہُراٹ و دوارہ دامون ہیمون مخلوق ءِ ہُراٹ ہرا تینا ہڑدےئی کاریم تیٹ اختہ ئسر و کنا ملی ٹی مسڑکو نا ایسری جملہ پھیری کننگ بناء مس “کنے یخین ءِ کہ نن سر سہب مرون۔۔۔۔ نن سر سہب مرون۔”


دی بلوچستان پوسٹ : دا نوشت اٹ ساڑی ہیت و خیال آک نوشتوک نا جند ئنا ءُ، دی بلوچستان پوسٹ میڈیا نیٹ ورک نا دا ہیت آتے مَننگ الّمی اَف و نئے کن دا ادارہ نا پالیسی تا درشانی ءِ کیک۔

پُوسکنا حوالک

کوئٹہ: خودکش تراک، پولیس کارندہ آتون اوار کہیک مرگ نا گواچی

بلوچستان نا دارالحکومت کوئٹہ ٹی اینو سہُب مروک اسہ خودکش جلہو ئسے ٹی پولیس کارندہ آتون اوار بیست و...

ایران ءِ اقوام متحدہ ٹی زالبول آتا کمیشن آن کشنگ نا گمان ارے

برجاء سال ستمبر ئٹی ورنا کرد مسڑ مہسا امینی نا ایرانی پولیس نا دزگیری ٹی بےدادی ئٹ خون و اوکان گڈ بناء مروکا برانز...

ایلم شاہ فہد ءِ فورسز آک اُرا غان بیگواہ کریر، پاش کننگ مرے – رضیہ بلوچ

بلوچستان نا بنجائی شار شال ئٹی زوراکی نا بیگواہی تا برخلاف وائس فار بلوچ مسنگ پرسنز نا برانزی کیمپ اینو 4875 می دے ہمپریس...

سبی: اولیکو سندھ بلوچستان کرکٹ ٹورنامنٹ بناء مس

آل سندھ بلوچستان کرکٹ ٹورنامنٹ بناء مس، گوازیک سبی و حب چوکی ٹی مرور۔ بلوچستان نا ضلع سبی ٹی اولیکو آل سندھ بلوچستان کرکٹ ٹورنامنٹ...

کاہان آپریشن: خلنگوک بندغ آتا جون تیا فورسز آتا گھاٹ

تدوکا دے تیٹ بلوچستان نا ضلع کوہلو ٹی فوجی آپریشن ئٹی خلنگ مروکا بندغ آتا جونک کوہلو ڈی ایچ کیو آ رادہ کننگانو و...